انسان ہمیشہ ایسے ہی پاگل ہوتا ہے

ایک کسان لالٹین لئے کچھ تلاش کر رہا تھا ،،
اس کو دیکھ کر __گیدڑ بولا .. یہ کسان پاس والے گاؤں میں رہتا ہے ،، پرسوں رات جب یہ بیساکھی کے میلے سے لوٹا تو اسے گھر پر اپنی بیوی نہ ملی ___ اس نے اندر سے کلہاڑی اٹھائی اور بیوی کی تلاش میں باہر نکلا ،،
اس کی بیوی گنے کے کھیت میں سوئی ہوئی تھی ،،کسان نے ارادہ کیا کے کلہاڑی کے ایک ہی وار سے ایسے بےوفا رانڈ بیوی کا خاتمہ کر دے گا ،، جس وقت وہ قریب گیا ،،چاندنی رات میں اس نے دیکھا کے اس کی بیوی کا سارا جسم نیلا پڑ چکا تھا اور ٹانگ پر سانپ کے کاٹے کا نشان بھی تھا تب سے اب تک یہ کلہاڑی کے ساتھ گنے کی فصل اجاڑ رہا ہے ،،
وہ کیوں ؟ راجہ گدھ نے سوال کیا ،،
یہ اس سانپ کو تلاش کر رہا ہے جو اس کی بیوی کا قاتل ہے ___ اس کی تلاش اتنی بیکار ہے اس کی جستجو اتنی بےمعنی ہے کہ بالآخر یہ خود دیوانہ ہو جائے گا ،،
کان قریب لا ،،
انسان ہمیشہ ایسے ہی پاگل ہوتا ہے وہ بھس میں سوئی تلاش کرتا ہے اور جب سوئی ملتی ہے تو وہ اتنا پاگل ہو چکتا ہے کے سوئی کو پہچان نہیں سکتا ،، بتا راجہ گدھ کیا تو اور تیری نسل انسان کی طر ح تلاش کے سفر میں ہو ،،، کیا تم ایسے سوال پوچھتے ہو جن کا جواب تمیں سمجھایا نہیں جا سکتا ؟
گدھ نے سر جھکا کر کہا ___شاید نہیں __شاید میں نہیں جانتا”

admin Worker Asked on April 23, 2016 in No Category.
Add Comment
0 Answers

Your Answer

By posting your answer, you agree to the privacy policy and terms of service.